Category Archives: Videos

Ao Koi Tafreeh Ka Samaan Kya Jaye – Qateel Shifai

Ao Koi Tafreeh Ka Samaan Kya Jaye
Phir Se Kisi Waiz Ko Pareshan Kya Jaye

Be Laghzish-e-Pa Mast Hon Unn Aankhon Se Pi Kar
Yun Muhtasib-e-Shehar Ko Heran Kya Jaye

Har Shai Se Muqaddas Hai Khayalat Ka Rishta
Kyun Mas’leh’ton Par Usay Qurbaan Kya Jaye

Muflis K Badan Ko Bhi Hai Chadar Ki Zaroorat
Ab Khul Ke Mazaron Pay Yeh Elaan Kya Jaye

Aghyar Ke Hathon Mein Hon Jis Mulk Ki Bagain
Mazool Har Us Malik Ka Sultan Kya Jaye

Woh Shakhs Jo Deewano Ki Izzat Nahi Karta
Us Shakhs Ka Bhi Chaak Geraibaan Kya Jaye

Pehlay Bhi Qateel Aankhon Ne Khaye Kayi Dhokay
Ab Aur Nah Benaye Ka Nuqsaan Kya Jaye

Qateel Shifai

یہ تیرا پھول سا چہرہ – قتیل شفائی


یہ تیرا پھول سا چہرہ – قتیل شفائی by QateelShifai

فلم : آدمی (1978) ۔۔ موسیقار : ایم اشرف
گلوکار : مہدی حسن ۔ شاعر: قتیل شفائی

یہ تیرا پھول سا چہرہ – چہرے پہ زلف کا سہرا
مہک تیرے بدن کی ہواؤں میں فضاؤں میں رچی ہے
عکس تیرا جو مصور کو بنانا آتا
دیکھنے اس کو میری جان زمانہ آتا
جہاں میں دھوم تیرے حسن کی ہے
پھول کے دھوکے میں دل تجھ سے لگا بیٹھے گا
آج بھنورا تیرے رخسار پہ آ بیٹھے گا
تیرے جلوؤں میں ایسی دلکشی ہے
چاند سورج کی تمنا نہیں رکھتا ہے یہ غلام
اپنے جلوؤں کی کرن ہی کوئی کر دے میرے نام
بدن تیرا سراپا روشنی ہے

Yeh Tera Phool Sa Chehra – Chehray Pah Zulf Ka Sehra
Mehak Tere Badan Ki Hawaoun Main Fazaoun Main Rachi Hay
Aks Tera Jo Musawwar Ko Banana Aata
Daikhnay Usko Meri Jaan Zamana Aata
Jahan Main Dhoom Tere Husan Ki Hay
Phool K Dhokay Main Dil Tujh Say Laga Baithay Ga
Aj Bhanwra Tere Rukhsaar Pah Aa Baithay Ga
Tere Jalwoun Main Aisi Dilkashi Hay
Chand Sooraj Ki Tamana Nahein Rakhta Hay Yeh Ghulam
Apnay Jalwoun Ki Kiran Hi Koi Kar Day Mere Naam
Badan Tera Sarapa Roshni Hay

Film: Aadmi – Musician: M Ashraf
Singer: Mehdi Hassan .. Poet: Qateel Shifai

سنا ہے محبت کا پیاسا ہے تو – قتیل شفائی


سنا ہے محبت کا پیاسا ہے تو – قتیل شفائی by QateelShifai

سنا ہے محبت کا پیاسا ہے تو
محبت کھڑی ہے تیرے سامنے
خیالوں کے پیچھے نہ بھاگ اے صنم
یہ مانا حسیں تجھ سا کوئی نہیں ہے
تجھے چاہتا ہے زمانہ
ذرا اس کی چاہت پہ بھی غور کرلے
تجھے زندگی جس نے جانا
خریدار جو ہے تیرے پیا رکی
وہ دولت کھڑی ہے تیرے سامنے
محبت کھڑی ہے تیرے سامنے
جہاں مسکرائیں تیری آرزوئیں
وی جنت ہے میری جوانی
یہ دیتی ہے ٹھنڈک نگاہوں کو پھر بھی
قیامت ہے میری جوانی
قیامت الگ چیز کوئی نہیں
قیامت کھڑی ہے تیرے سامنے
محبت کھڑی ہے تیرے سامنے
اجالے ترسیں ہیں میری جبیں سے
مزا مجھ میں ہے چاندنی کا
میرے گیسوؤں کی گھٹاؤں میں تجھ کو
ملے گا سکوں زندگی کا
کوئی اور تجھ کو نہ جو دے سکے
وہ راحت کھڑی ہے تیرے سامنے
خیالوں کے پیچھے نہ بھاگ اے صنم
حقیقت کھڑی ہے تیرے سامنے
فلم: آدمی ۔۔موسیقار : ایم اشرف
گلوکارہ : ناہید اختر ۔۔ شاعر: قتیل شفائی